Image

 

شب غم رنج و الم کے یہ سلسلے مرحلہ وار
گزرے تو فقط تیری دعاؤں کے سہار

برق رفتار یہ ترقی ہر اک میدان میں فتح
تیری ہی رہبری میں دیکھئ ہم نے یہ بہار

ہر اک ہوا رسوا جو آیا سامنے تیرے
مٹا نام و نشان اسکا جس نے کھائی تجھ سے خار

گزرا یہ کارواں جب تیری رہنمائی میں
ہم راہ ہوتے چلے قدسیاں بے شمار

گلوں نے تجھ سے ہی سیکھا ہے مسکرانا
مانند مہتاب ہے تیرے رخ کا انوار

میرے آقا یہ دنیا و ما فیہا کیا ہے
فدا ہو تیرے لیے اپنی یہ جان بار بار

ہو خدا ہر آن تیرا ممد و معاون
رہے توں سدا اسکی حفاظت کے حصار

 

Shab e Gham Ranj o Alam k yeah silsalay marhalawar.
Guzray to faqat tayre duawoun k sahaar.

Baraq raftar yeah taraqi har ik maydan main fatah
Tayre he rahbari main daykhe hum nay yeah bahar.

Har ik hua ruswa jo aya samnay tayray.
Mitta naam o nishan uska jis nay khai tujh say khaar.

Guzra yeah karwan jub tayre rahnumai main.
Hum raah hotay chalay qudusiyan bayShumar.

Gulon nay tujh saay he sekha ha muskurana.
Manid e maah-taab ha tayray rukh ka anwar.

mayray aqa yeah duniya o Ma.Feha kiya ha.
Fida ho tayry liay apni yeah jaan bar bar.

Ho khuda har ann tayra mumid o muawin.
rahay to sada uski hifazat k hissar.

 

 

Advertisements