bait

سب گناھوں کا غبار دھلتا جاتا هے
اس کے افضال کا اک باب کھلتا جاتا هے

میرے آقا کے لبوں سے جو هوتا هے ادا
ھر اک حرف دعا میں ڈھلتا جاتا هے

بیعت کا جو منظر هو ٹی وی پے نشر
روح میں ایک پنڈال سجتا جاتا هے

چشم نادم سے رواں هر اک قطره
بار عصیاں جو دوا بنتا جاتا هے

بیچ کر تیرے هاتھوں رضا اپنی
هر بھٹکا هوا سنبھلتا جاتا هے

روحانیت سے سجے ان لمحوں کے طفیل
خوف ابلیس گمان سے ٹلتا جاتا هے

دھو کے دل کو اپنے هر سال بیعت سے
هر احمدی خدا سے رابطه بڑھاتا هے

Sab Gunahon ka ghubar dhulta jata hai
Uskay afzaal ka ik baab khulta jata hai

Myry Aqa k labon sy jo hota hai ada
har ik harf dua man dhalta jata hai

Ba’ait ka jo manzar ho tv pay nashar
Roah main ik pindal sajta jata hai

Chashm e nadim sy rawan hr ik qatra
Baar e isyan ko dava banta jata hai

Beach kar teray hathon raza apni
Har bhatka hua Sambhalta jata hai

Rohaniyat sy sajay in lamhon k tufail
Khoaf e ibles guman sy talta jata hai

Dho k dil ko apny har sal ba’ait say
Har Ahmadi khuda say rabata barhata hai

Advertisements